مصباح الحق قومی کرکٹ ٹیم کے کوچ مقرر

پاکستان کرکٹ بورڈ نے سابق کپتان مصباح الحق کو تین سالوں کے لئے تینوں فارمیٹ کی کرکٹ میں قومی کرکٹ ٹیم کا ہیڈ کوچ مقرر کر دیا ہے۔
پی سی بی نے شفافیت اور احتساب کا نظام لانے کے لیے مصباح الحق کو چیف سلیکٹر کا عہدہ بھی سونپ دیا ہے۔ مصباح الحق پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے قائم کردہ پانچ رکنی پینل کا متفقہ انتخاب تھے۔ پانچ رکنی پینل میں سابق کپتان اور کوچ انتخاب عالم، بازید خان، اسد علی خان، وسیم خان اور ذاکر خان شامل تھے۔

مصباح الحق کی تجویز پر پی سی بی نے وقار یونس کو قومی کرکٹ ٹیم کا باؤلنگ کوچ مقرر کر دیا ہے ہے۔ وقار یونس کو بھی تین سال کے لیے بولنگ کوچ کا کانٹریکٹ دیا گیا ہے۔ وقار یونس ماضی میں دو مرتبہ قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ رہنے کے ساتھ ساتھ آئی سی سی ہال آف فیم کا حصہ بھی ہیں۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کے لیے مقرر کردہ دونوں کوچز کے ناموں کی منظوری چیئرمین پی سی بی احسان مانی نے دی ہے۔

مصباح الحق اور وقار یونس سری لنکا کے ساتھ آنے والی سیریز میں قومی کرکٹ ٹیم کے کوچز ہوں گے جس میں قومی کرکٹ ٹیم سری لنکا کے خلاف 3 ایک روزہ اور تین ٹی ٹوئنٹی میچز پر مشتمل سیریز کھیلے گی۔

مئی 2017 میں انٹر نیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لینے والے پینتالیس سالہ مصباح الحق آئی سی سی ٹیسٹ رینکنگ میں بطور کھلاڑی چھٹے بہترین بیٹسمین رہے ہیں۔ آئی سی سی ون ڈے رینکنگ میں ساتویں بہترین بیٹسمین رہے۔ مصباح الحق کو ٹیسٹ کرکٹ میں تیز ترین نصف سنچری بنانے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔ مصباح الحق 2009 ورلڈکپ کی فاتح قومی کرکٹ ٹیم کا حصہ رہے ہیں۔ مصباح الحق پاکستان کی جانب سے سب سے زیادہ 26 ٹیسٹ میچ جیتنے والے کپتان ہیں۔ 2016 میں آئی سی سی سپرٹ آف کرکٹ ایوارڈ جیتا۔ بطور کپتان اسلام آباد یونائیٹڈ کو پہلی پی ایس ایل میں فاتح بنایا۔

مصباح الحق نے کہا کہ پاکستان کی کوچنگ کرنے والے بہترین ناموں کی فہرست میں شامل ہونا میرے لئے فخر کا باعث ہے۔ مصباح الحق نے کہا کہ خود سے وابستہ توقعات پر پورا اترنے کی ہرممکن کوشش کروں گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں